میڈیکل کی طالبہ نے اپنی زندہ ماں کا دل اور دیگر اعضاء نکال لیے

روس میں ایک 21 سالہ لڑکی کو اپنی والدہ کو بہیمانہ طریقے سے قتل کرنے کے الزام میں گرفتار کرلیا گیا۔

میڈیکل کی طالبہ نے اپنی زندہ ماں کا دل اور دیگر اعضاء نکال لیے

غیر ملکی میڈیاکے مطابق ملزمہ پرالزام ہےکہ اس نے اپنی 40 سالہ والدہ کو وحشیانہ طریقے سے ایک چاقو کی مدد سے کاٹ ڈالا اور آخری سانسیں لیتی اپنی ماں کا سینہ چیرکر دل بھی نکال لیا اور آنتیں اور دیگر اعضاء بھی کاٹ لیے۔

پولیس کے مطابق ملزمہ اینا لیکووچ 'جو کہ میڈیکل کی طالبہ ہے' نے اس وحشیانہ اقدام کے بعد نہایت سکون سے غسل کیا اور اپنے دوست سے ملنے باہر چلی گئی۔

رپورٹ کے مطابق ملزمہ سوشل میڈیا خاص طورپر انسٹا گرام پر کافی سرگرم ہے جہاں اس نے اپنی کافی ساری تصاویر پوسٹ کر رکھی ہیں۔

عدالت میں پیشی کے دوران ملزمہ کٹہرے میں لیٹ گئی اور ناخن صاف کرتی رہی اور بعد میں اٹھ کر قہقہہ لگایا اور وکٹری کا نشان بھی بنایا۔

مقامی میڈیا کے مطابق لڑکی کی ماں یعنی مقتولہ خاتون جرمنی میں کام کرتی تھی اور حال ہی میں وہاں سے آئی تھی اور اسے لگتا تھا کہ اس کی بیٹی نشے کی لت میں پڑ گئی ہے جس پر اس نے  علاج کا انتظام کیا تھا جس نے ملزمہ کو مشتعل کردیا۔

پولیس نے ملزمہ کو بحالی مرکز منتقل کردیا ہے جب کہ دونوں خواتین کے ایک رشتہ دار کوبھی حراست میں لیا گیا ہے جس سے پوچھ گچھ جاری ہے۔

What's Your Reaction?

like
0
dislike
0
love
0
funny
0
angry
0
sad
0
wow
0