نیٹ فلیکس ’دی کراؤن‘ سے متعلق انتباہ جاری کرے کہ وہ حقیقی نہیں، برطانوی حکومت

اس میں کوئی شک نہیں ’دی کراؤن‘ کے چوتھے سیزن کو شاندار طریقے سے فلمایا گیا ، تاہم اسے دیکھ کر نئی نسل کے لوگ غیر حقیقی باتوں کو حقیقت سمجھ بیٹھیں گے، برطانویوزیرثقافت

نیٹ فلیکس ’دی کراؤن‘ سے متعلق انتباہ جاری کرے کہ وہ حقیقی نہیں، برطانوی حکومت

برطانوی حکومت نے کہا ہے کہ سٹریمنگ ویب سائٹ ’نیٹ فلیکس‘ حال ہی میں ریلیز کی گئی ’دی کراؤن‘ نامی ویب سیریز کے آغاز میں ہی یہ انتباہ جاری کرے کہ مذکورہ ویب سیریز حقیقی نہیں۔واضح رہے کہ ’دی کراؤن‘ کے چوتھے سیزن کو ’نیٹ فلیکس‘ پر گزشتہ ماہ 15 نومبر کو ریلیز کیا گیا تھا۔اسی سیریز کے پہلے ہی تین سیزنز جاری کیے جا چکے ہیں تاہم ان سیزنز پر برطانوی حکومت نے کوئی بیان یا اعتراض نہیں کیا تھا لیکن اب ویب سیریز کے چوتھے سیزن پر برطانوی حکومت نے اعتراض کیا ہے۔

چوتھے سیزن میں برطانوی شاہی خاندان کے متعدد نئے کردار دکھائے گئے ہیں، جن میں لیڈی ڈیانا، ان کے شوہر شہزادہ چارلس اور برطانیہ کی پہلی خاتون وزیر اعظم مارگریٹ تھیچر کا کردار بھی شامل ہے۔

مذکورہ سیریز کے ریلیز ہوتے ہی کئی شائقین نے اسے سیریز کے تمام سیزنز سے بہترین قرار دیا تھا اور دنیا بھر میں اس کی تعریفیں کی جا رہی ہیں۔تاہم برطانوی حکومت نے سیریز پر اعتراض کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ ’نیٹ فلیکس‘ سیریز کے آغاز میں ہی یہ نوٹ شائع کرے کہ ’دی کراؤن‘ کا چوتھا سیزن بھی حقیقی نہیں بلکہ فکشن پر مبنی ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق برطانیہ کے وزیر ثقافت اولیور ڈاؤڈن نے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہاکہ اس میں کوئی شک نہیں کہ ’دی کراؤن‘ کے چوتھے سیزن کو شاندار طریقے سے فلمایا گیا ہے، تاہم اسے دیکھ کر نئی نسل کے لوگ غیر حقیقی باتوں کو حقیقت سمجھ بیٹھیں گے۔انہوں نے دلیل دی کہ جن لوگوں نے ’دی کراؤن‘ کے چوتھے سیزن میں دکھائے گئے واقعات کو آنکھوں سے نہیں دیکھا ہوگا، وہ ویب سیریز میں دکھائے گئے واقعات کو حقیقت سمجھ بیٹھیں گے۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ نیٹ فلیکس کو بھی دیگر اداروں کی طرح سیزن کے آغاز میں ہی یہ نوٹ دینا چاہیے کہ ’دی کراؤن‘ کی کہانی حقیقت پر مبنی نہیں ہے بلکہ یہ کہانی فکشن پر مبنی ہے۔برطانوی حکومت اور لیڈی ڈیانا کے بھائی کے مطالبے پر تاحال نیٹ فلیکس نے کوئی رد عمل نہیں دیا۔

What's Your Reaction?

like
0
dislike
0
love
0
funny
0
angry
0
sad
0
wow
0