کیپٹن (ر) صفدر و دیگر کے خلاف مزار قائد بے حرمتی کیس جھوٹا قرار

کال ڈیٹا ریکاڑد کے مطابق مدعی مقدمے کے واقعے کے وقت مزار قائد پر موجود ہی نہیں تھا،پولیس نے استغاثہ کے اعتراضات دور کر کے حمتی چالان جمع کروا دیا

کیپٹن (ر) صفدر و دیگر کے خلاف مزار قائد بے حرمتی کیس جھوٹا قرار

 پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما اور سابق وزیراعظم نواز شریف کے داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر و دیگر کے خلاف مزار قائد بے حرمتی کیس جھوٹا قرار دیا گیا ہے۔تفصیلات کے مطابق سٹی کورٹ میں مزار قائد بے حرمتی کیس کی سماعت ہوئی۔پولیس نے تفتیش کے بعد مریم نواز اور ان کے شوہر کے خلاف مزار قائد کی بے حرمتی کا کیس جھوٹا قرار دیا گیا۔

پولیس نے استغاثہ کے اعتراضات دور کر کے حمتی چالان جمع کروا دیا۔مقدمے سے املاک کو نقصان پہنچانے اور جان سے مارے کی دھمکیوں کے الزمات بھی خارج کر دئیے گئے۔محکمہ پراسیکیوشن نے پولیس چالان سے اتفاق کرتے ہوئے چالان کو بی کلاس کر دیا۔چالان کے مطابق مریم نواز کی مزار قائد پر حاضری کے وقت مزار عام شہریوں کے لیے بند تھا۔

جب کہ سی سی ٹی وی فوٹیج میں مدعی مقدمہ موجود نہیں ہے۔

کال ڈیٹا ریکاڑد کے مطابق مدعی مقدمے کے واقعے کے وقت مزار قائد پر موجود نہیں تھا،استغاثہ نے اسکرونٹی نوٹ میں یہ بھی کہا کہ مزار قائد سیفٹی اینڈ مینٹیننس آرڈیننس ہمارے دائر اختیار میں بہیں آتا۔اگر ایس ایچ او چاہے تو مزار قائد آرڈننس کے لیے براہ راست علحیدہ داخل کر سکتا ہے۔۔چالان کے متن کے مطابق چالان میں قتل کی دھمکیوں کی سیکشن ختم کر دی گئی ہے، کسی بھی قسم کے اسلحے کی کوئی نمائش نہیں کی گئی، سرکاری عمارت کو بھی کوئی نقصان نہیں پہنچا، اس لیئے مقدمے سے دفعہ ختم کر دی گئی۔

چالان کے متن میں کہا گیا ہے کہ مدعی مقدمہ کو کئی بار بلایا گیا لیکن انہوں نے بیان نہیں دیا، مریم نواز کے خلاف کوئی شواہد موصول نہیں ہوئے۔چالان کے متن میں عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ کیپٹن (ر)صفدر کے خلاف قائدِ اعظم ایکٹ کے تحت چالان منظور کیا جائے۔

What's Your Reaction?

like
0
dislike
0
love
0
funny
0
angry
0
sad
0
wow
0